مکتبہ جبریل
1.76K members
15 photos
2 videos
14 files
44 links
دینی علوم کی ڈیجیٹائزیشن کی تحریک
مکتبہ جبریل رہنمائی بوٹ @matbatypingbot
مکتبہ جبریل چینل https://t.me/maktabajibreel
آفیشل ویب سائٹ http://www.elmedeen.com/
Download Telegram
to view and join the conversation
http://www.elmedeen.com/new-books

السلام علیکم ورحمۃ اللہ
الحمدللہ مکتبہ جبریل کے لئے 111 کتب و رسائل کی اپڈیٹ لگا دی گئی ہے۔
1: ماہنامہ مظاہر علوم سہارنپور فروری 2018
2:  ماہنامہ مظاہر علوم سہارنپور مارچ 2018
3:  ماہنامہ مظاہر علوم سہارنپور اپریل 2018
4:  ماہنامہ مظاہر علوم سہارنپور مئی 2018
5:  ماہنامہ مظاہر علوم سہارنپور جون 2018
6:  ماہنامہ مظاہر علوم سہارنپور جولائی 2018
7:  ماہنامہ مظاہر علوم سہارنپور اگست 2018
8:  ماہنامہ مظاہر علوم سہارنپور ستمبر 2018
9:  ماہنامہ الحق اکتوبر 2018
10:  حالات حسرت حضرت مولانا محمد عارف ہنسوی صاحب
11:  نگارشات اکابر بتذکرہ جواہر عارف حضرت مولانا نعمان ارشدی صاحب
12:  اسباب فسخ نکاح حضرت مولانا ثمیر الدین قاسمی صاحب
13:  جمہوری ملک میں رہنے کا طریقہ حضرت مولانا ثمیر الدین قاسمی صاحب
14:  ثمرۃ الاوزان حضرت مولانا ثمیر الدین قاسمی صاحب
15:  ماہنامہ ندائے دارالعلوم وقف دیوبند رجب المرجب 1438 مطابق اپریل 2017
16:  ماہنامہ ندائے دارالعلوم وقف دیوبند شعبان/رمضان 1438 مطابق مئی/جون 2017
17:  ماہنامہ ندائے دارالعلوم وقف دیوبند شوال/ذیقعدہ 1438 مطابق جولائی/اگست 2017
18:  ماہنامہ ندائے دارالعلوم وقف دیوبند ذی الحجہ 1438 مطابق ستمبر 2017
19:  ماہنامہ شاہراہ علم محرم/صفر/ربیع الاول 1427 دفاع حبیب کبریا صلی اللہ علیہ وسلم نمبر
20:  ماہنامہ شاہراہ علم محرم/صفر/ربیع الاول 1428 سائنس اور اسلام نمبر
21:  ماہنامہ شاہراہ علم رجب/شعبان/رمضان المبارک 1428 جامعہ نمبر
22:  ماہنامہ دار العلوم دیوبند ذیقعدہ 1439ہجری مطابق اگست 2018ء
23:  ماہنامہ دار العلوم دیوبند ذی الحجہ 1439ہجری مطابق ستمبر 2018ء
24:  ماہنامہ دار العلوم دیوبند محرم الحرام 1440ہجری مطابق اکتوبر 2018ء
25:  ماہنامہ دار العلوم دیوبند صفر/ربیع الاول 1440ہجری مطابق نومبر/دسمبر 2018ء شان صحابہ نمبر
26:  ماہنامہ دار العلوم دیوبند ربیع الثانی 1440ہجری مطابق جنوری 2019ء
27:  ماہنامہ ندائے دارالعلوم وقف دیوبند جمادی الاولیٰ 1440 فروری 2019
28:  مغربی یوپی کا ایک یادگار سفر حضرت مولانا ڈاکٹر محمد اکرم صاحب ندوی
29:  سفر آخرت کے اسلامی احکام حضرت مولانا مفتی محمد شعیب اللہ خان صاحب مفتاحی
30:  ثمرۃ العقائد حضرت مولانا ثمیر الدین قاسمی صاحب
31:  شرح فوائد مکیہ محترم قاری محمد ادریس عاصم صاحب
32:  تنشیط الاذھان فی توضیح الاوزان حضرت مولانا مفتی مبین الرحمن صاحب
33:  تعزیت سنت کے مطابق کیجیے حضرت مولانا مفتی مبین الرحمن صاحب
34: بامقصد زندگی اور تنظیم وقت کی حقیقت اور ضرورت حضرت مولانا مفتی مبین الرحمن صاحب
35:  ادھار اور قسطوں کے ذریعے کاروبار سے متعلق شرعی احکام حضرت مولانا مفتی مبین الرحمن صاحب
36:  وسوں اور شک سے نجات پائیے حضرت مولانا مفتی مبین الرحمن صاحب
37:   حضرت مولانا ابوالمحاسن سید محمد سجاد صاحب اور جمیعۃ علماء ہند حضرت مولانا اختر امام عادل قاسمی صاحب
38:  ثمرۃ الفقہ حضرت مولانا ثمیر الدین قاسمی صاحب
39:  ماہنامہ شاہراہ علم رجب/شعبان/رمضان 1432 برائے معمولات ماہ رمضان نمبر
40:  ماہنامہ شاہراہ علم ربیع الثانی/ جمادی الاول 1435 حالات حضرت مہدی اور علامات قیامت نمبر
41:  ماہنامہ شاہراہ علم صفر/ربیع الاول 1437 رابطہ ادب اسلامی کے 35ویں مذاکرہ علمی کی روداد نمبر
42:  ماہنامہ شاہراہ علم صفر المظفر 1438 مسلم پرسنل لاء بورڈ کا تحفظ نمبر
43:  ماہنامہ شاہراہ علم ربیع الاول/ ربیع الثانی 1440 شان صحابہ نمبر
44:  ماہنامہ شاہراہ علم جمادی الاولی/ جمادی الاخری 1439 مسجد اقصی اور شہر قدس نمبر
45:  ماہنامہ شاہراہ علم رجب تا شوال 1439 قرآن نمبر
46: " ماہنامہ شاہراہ علم رجب/ شعبان/ رمضان 1426 ""دور حاضر کی تحریکات، فتنے، فرقے، سازشیں اور ہمارا لائحہ عمل"""
47:  ماہنامہ شاہراہ علم رجب المرجب 1435 سیاست، جمہوریت، ووٹ اور اسلام نمبر
48:  ماہنامہ شاہراہ علم شعبان/رمضان/شوال 1438 خصوصی شمارہ
49: " ماہنامہ شاہراہ علم شعبان/رمضان 1436 ""عصر حاضر کے سلگتے فتنے اور مسلمانوں کے لیے لائحہ عمل"""
50: " ماہنامہ شاہراہ علم رمضان/ شوال/ ذوقعدہ 1437 ""تفہیم اسلام عصر حاضر کے تناظر میں"""
51:  ماہنامہ شاہراہ علم ذیقدہ/ ذی الحجہ 1439 بیاد مفکر ملت حضرت مولانا عبداللہ صاحب کاپودروی
52:  ماہنامہ شاہراہ علم ذی الحجہ 1438 برتذکرہ حضرت شیخ جونپوری
53:  ماہنامہ پیام رحمانیہ جنوری 2017
54:  ماہنامہ پیام رحمانیہ فروری 2017
55:  ماہنامہ پیام رحمانیہ مارچ 2017
56:  ماہنامہ پیام رحمانیہ اپریل 2017
57:  ماہنامہ پیام رحمانیہ مئی 2017
58:  ماہنامہ پیام رحمانیہ جون 2017
59:  ماہنامہ پیام رحمانیہ جولائی 2017
60:  ماہنامہ پیام رحمانیہ اگست 2017
61:  ماہنامہ پیام رحمانیہ ستمبر 2017
62:  ماہنامہ ارمغان جنوری 2019
63:  ماہنامہ ارمغان فروری 2019 حضرت مولانا سید محمد واضح رشید حسنی ندوی نمبر
64:  ماہنامہ نقوش عالم فروری 2018
65:  بزرگان رائے پور حضرت مولانا مفتی محمد مسعود عزیزی ندوی صاحب
66:  علم بلا استاد اور اس کے خطرات حضرت مولانا فیصل احمد ندوی بھٹکلی صاحب
67:  ماہنامہ نقوش عالم جون 2018
68: ماہنامہ نقوش عالم نومبر 2018
69: ماہنامہ نقوش اسلام مارچ/اپریل 2018
70: ماہنامہ نقوش اسلام مئی/جون 2018
71: ملفوظات حبیب الامت جلد سوم
72: مقبول مناجات
73: ملنے کے نہیں نایاب ہیں ہم
74: ثمرۃ المیراث
75: سیرت و شخصیت خطیب الاسلام حضرت مولانا محمد سالم قاسمی صاحب جلد اول
76: آداب الاستفتاء مسئلہ پوچھنے اور دین سیکھنے کے آداب
77: بچوں کو مسجد لانے اور ان کی صف بنانے سے متعلق احکام
78: بیان کو کیسے مفید بنائیں؟
79: اطاعت والدین کے حدود
80: الجہاد
81: نماز کے مکروہ اوقات
82: ماہنامہ شاہراہ علم محرم تا جمادی الاخری 1430 تعارف العلوم نمبر
83: ماہنامہ شاہراہ علم صفر/ربیع الاول 1435 علم سیرت ایک تعارف نمبر
84: ماہنامہ شاہراہ علم ربیع الاول/ربیع الثانی 1435 سیرت النبی صلی اللہ علیہ وسلم نمبر
85: ماہنامہ شاہراہ علم ذی الحجہ 1433/محرم 1434 تحفظ ناموس رسالت صلی اللہ علیہ وسلم نمبرماہنامہ آئینہ مظاہر علوم سہارنپور دسمبر 2018
86: ماہنامہ آئینہ مظاہر علوم سہارنپور فروری 2019
87: ماہنامہ پیام رحمانیہ جون/جولائی 2018
88: ماہنامہ پیام رحمانیہ ستمبر 2018
89: ماہنامہ پیام رحمانیہ نومبر دسمبر 2018
90: ماہنامہ صدائے حق دسمبر 2018
91: ماہنامہ صدائے حق جنوری 2019
92: مدارس اسلامیہ مشورے اور گزارشیں
93: درسی املاء شرح ترمذی شریف
94: آپ وٹس ایپ استعمال کریں مگر
95: ماہ رجب المرجب فضائل احکام منکرات
96: تقسیم جائیداد کے اسلامی اصول
97: قاضی اطہر مبارکپوری کے سفرنامے
98: ماہنامہ شاہراہ علم ربیع الثانی تا رمضان المبارک 1429 فقہ المناسبات نمبر
99: ماہنامہ پیام رحمانیہ اکتوبر 2018
100: ماہنامہ پیام رحمانیہ جنوری 2019
101: منہاج علم و فکر فکر نانوتوی اور جدید چیلنجز
102: سیرت نبی رحمت صلی اللہ علیہ وسلم
103: عمرہ کی ادائیگی کیلئے حرمین شریفین کا ایک مقدس سفر
104: سیرت و شخصیت خطیب الاسلام حضرت مولانا محمد سالم قاسمی صاحب جلد دوم
105: اپنے عقائد کا تحفظ کیجیے
106: ماہنامہ ندائے دارالعلوم وقف دیوبند جمادی الاخریٰ 1440 مارچ 2019
107: مالی جرمانہ کا شرعی حکم
108: مشترکہ خاندانی نظام
109: سواریوں میں وضو اور نماز کی ادائیگی کا طریقہ
110: یاد حرم
111: کشف المعضلہ فی مباحث البسملہ

اللہ تعالی اس کے لئے تمام محنت کرنے والوں کی کوشش کو قبول فرمائے۔ خصوصا رب تعالی شانہ ان مصنفین اور ناشرین کو جزائے خیر عطا فرمائیں جو کہ اپنی تصانیف ان پیج یا ورڈ کی شکل میں فراہم کر رہے ہیں جس کی بدولت مکتبہ میں کتب کا اضافہ تیزی سے ممکن ہو رہا ہے۔
            *ماہنامہ النخیل کا آغاز اشاعت*        

مجلات اور رسائل نکالنے کا شوق ایک عرصہ سے رہا ، وفاق المدارس العربیہ کا ترجمان رسالہ پہلے سہ ماہی اور بعد میں ماہانہ نکالا گیا، شروع سے تقریباًسولہ سال تک اس کی ادارت میرے پاس رہی، اس پورے عرصہ میں اس کا کوئی مضمون کبھی ادارتی انتشار کا باعث نہیں بنا، جب وفاق المدارس کی تاریخ کا کام بابائےمدارس مولانا سلیم اللہ خان صاحبؒ نے میرے حوالے کیا تو اس کی ادارت سے استعفیٰ دیا … کوئی پندرہ سال قبل خواتین کے لیے ماہنامہ حیا کے نام سے ایک ڈائجسٹ نما رسالہ نکالا، اس میں اسلامی مضامین،کہانیاں،ناول اور مستقل سلسلے شائع ہوتے ہیں اور پاکستان میں خواتین کے لیے اس سے بہتر ماہنامہ اب تک نہیں آیا، دوسوچوبیس صفحات پر مشتمل یہ ماہنامہ گذشتہ پندرہ سال سے الحمد للہ مسلسل شائع ہورہا ہے…

چھ سات سال قبل ’’النخیل ‘‘ کے نام سے تحقیقی ،ادبی اور علمی مضامین کی اشاعت کے لیے ایک ماہنامہ کا ڈکلریشن لیا تھا،لیکن وقت گذرتا رہا ،اس کا آغاز نہیں ہوسکا،ہر کام کا ایک وقت مقرر ہے، آج وہ وقت آپہنچا اور اس کا پہلا شمارہ آپ کے ہاتھ میں ہے۔

تعلیم کی طرح ہمارا اردو ادب کا اثاثہ بھی قدیم و جدید میں تقسیم ہوچکا ہے،عصری تعلیم گاہوں اور میڈیا سے وابستہ اہل قلم کی ایک الگ دنیا ہے، اسلامی درس گاہوں سے وابستہ اہل قلم سےان کی پہچان تک نہیں، اِدھر بھی یہی حالت ہے، دونوں کے درمیان یہ خلیج بہت بڑھ گئی ہے،حد ہے اور بے حد ہے کہ جناب سلیم اختر صاحب مرحوم اپنے سالناموں میں اردو ادب کی مطبوعات کا جائزہ لیتے رہے، کسی عالم کی تحریر کو کبھی اس میں جگہ نہیں دی،اردو سفر ناموں میں حضرت مولانامفتی تقی عثمانی صاحب کے ’’جہاں دیدہ‘‘ کو کون نظر انداز کرسکتا ہے، ان کی نظر سے یہ سفر نامہ بھی اوجھل رہا …اس خلیج کو کم کرنے کی ضرورت ہے، النخیل اسی راہ پر گامزن رہے گا،وہ دونوں حلقوں کے قلم پارے سامنے لائے گا، ہماری بات دونوں حلقوں کے اکابر سے چل رہی ہے ،مشہور مورخ و محقق محترم جناب پروفیسر خورشید رضوی صاحب ، ماہر اقبالیات جناب ڈاکٹر تحسین فراقی صاحب (ناظم مجلس ترقی ادب لاہور)مشہور افسانہ نگار جناب اسد محمد خان صاحب نے ادارت ومشاورت میں شرکت قبول فرمالی ہے اوربہت جلد دیگر حضرات کے نام بھی سامنے آجائیں گے!

پاکستان کے اہل قلم کے ساتھ ،ہندوستان کے اہل علم کے مضامین بھی ان شاء اللہ چھپتے رہیں گے۔آج کی دنیا کے نیٹ نے فاصلے سمیٹ لیے اور برقی لہروں نے اہل علم کو ایک دوسرے کے ساتھ جوڑ دیا ، جغرافیائی سرحدیں اپنی جگہ رہتی ہیں اور رہیں گی لیکن علم و نظریہ کو عام کر نے میں زمانے کی اس ایجاد نے کمال دکھایا ، النخیل بھی اس سے اپنے حصہ کا کمال سمیٹے گااوراسے عام کرنے کے لیے کوشاں رہے گا،ان شاء اللہ!

اس وقت میرے ساتھ نوجوان اہل قلم کی ٹیم میں محمد ساجد میمن صاحب(مدیر ماہنامہ حیا)،بشارت نواز صاحب( معاون ایڈمن مکتبہ جبریل،معاون مدیر النخیل)،مفتی اویس نعیم صاحب(پاک قطر تکافل)، جنید خان صاحب،عدنان کریمی صاحب، عبد اللہ ساقی صاحب، اختر علی صاحب، حبیب حسین صاحب اور یرید احمد نعمانی صاحب شامل ہیں،یہ جدید و قدیم علوم کے حامل ابھرتے ہوئے اہل قلم ہیں۔

النخیل ان شاء اللہ ہر ماہ کے پہلے ہفتے چھپے گا، چھپنے کے ساتھ ہی اس کا برقی ایڈیشن بھی نیٹ پر نشر کردیا جائے گااور اس کی پی ڈی ایف فائل عام کردی جائے گی،اُمید ہے کہ اس کا پیغام لاکھوں لوگوںتک پہنچے گا۔

النخیل ایک خالص علمی ، تحقیقی اور ادبی مجلہ ہے، اسے علم و تحقیق اور زبان و ادب ہی کے زاویہ ٔ نگاہ سے دیکھا اور جانچا جائے، علم و تحقیق اور زبان و ادب کی نہ کوئی حد ہے ، نہ سرحد ہے! ہمیں اُمید ہے النخیل کو ڈیجیٹل دور میں علم رسانی کا ایک خوش گوار اضافہ سمجھا جائے گا… اللہ ہمارا حامی و ناصر ہو۔

            ابن الحسن عباسی
             ۱۸رجب ۱۴۴۰ھ
٭…٭…٭
النخیل کا دوسرا شمارہ منظر عام پر آگیا ۔۔۔گراں قدر مضامین اور افادیت سے بھر پور تحریریں ۔۔۔ایک نظر ضرور دیکھیں ۔۔۔ہندو پاک کے ممتاز اہل علم کی نگارشات ۔۔۔۔مطالعہ کیسے کیاجائے؟: خورشید احمد گیلانی مرحوم کا ایک نایاب قلمی شہہ پارہ۔۔۔۔مسنون دعاوں کی معتبر کتابوں کا تعارف :ایک مفید مضمون ۔۔۔۔کتاب سے محبت کس طرح پیدا ہو؟:رضا عابدی کی زبردست تحریر ۔۔۔دل کو چیرنے سے بچائیں ۔۔۔:حکیم سلیمانی کا ایک ایسا تیر بہدف نسخہ قلب جسے بے شمار لوگ شفایاب ہوئے ۔۔۔۔اور بہت کچھ۔۔۔۔
ماہنامہ النخیل رمضان 1440.pdf
5.4 MB
اسلامی علوم و تحقیقات اور اردو زبان و ادب کا ترجمان
ماہنامہ النخیل رمضان 1440
السلام علیکم ورحمۃ اللہ
الحمدللہ مکتبہ جبریل میں چند رسائل کو شامل کرتے ہوئے اپڈیٹ لگا دی گئی ہے۔
http://www.elmedeen.com/new-books
*اعتکاف والوں کی خدمت میں*

رمضان المبارک کے عشرہ اعتکاف میں عام مسلمانوں کی ایک بڑی تعداد اعتکاف کی نیت سے مسجدوں میں قیام اختیار کرتی ہے، گزشتہ چند سالوں سے وطن عزیز میں معمر افراد کے ساتھ ساتھ جوانوں اور نوجوانوں میں اس طرف رجحان بڑھا ہے، الحمدللہ یہ بہت حوصلہ افزا صورتحال ہے، کئی مساجد میں ائمہ حضرات اور انتظامیہ نے اعتکاف میں بیٹھنے والوں کیلئے دینی تعلیم و تربیت کی نشستیں طے کی ہوتی ہیں تاکہ اعتکاف والوں کے انفرادی اور اجتماعی اعمال کے حوالے سے تربیت ہو سکے، بعض مساجد میں اس کا اہتمام نہیں ہوتا، وہاں اس کی طرف توجہ دینے کی ضرورت ہے، اعتکاف میں بیٹھنے والوں کیلئے آدھے پونے گھنٹے کا ایک ایسا تعلیمی حلقہ بھی ہونا چاہیے، جس میں انہیں درج ذیل تین امور سکھائے جائیں:

*اول*: نماز!۔۔۔۔۔۔نماز دین کا ستون ہے اور رب کے سامنے اظہار بندگی کا سب سے اہم وسیلہ ہے لیکن کئی لوگوں کی نماز درست نہیں ہوتی، حقیقت یہ ہے کہ جس کی نماز ٹھیک نہیں ہو گی، اس کا کچھ بھی ٹھیک نہیں ہو گا ،اس لئے اعتکاف والوں کو مسنون طریقے سے نماز سکھانے کا اہتمام کیا جائے، نماز کے ارکان و افعال اور ان میں پڑھی جانے والی تسبیحات و مناجات کے سننے سنانے اور سیکھنے سکھانے کا باہمی مذاکرہ ہو اور اس کی عملی مشق و تربیت ہو تاکہ جن کی نماز میں غلطیاں ہیں، وہ صحیح طریقہ نماز سیکھ سکیں

*دوم*: قرآن کریم کی کم ازکم آخری پندرہ سورتیں اور خاص فضیلت والی چند آیات، مثلا، آیت الکرسی، سورۃ بقرہ کی آخری آیات وغیرہ درست تلفظ کے ساتھ اعتکاف والوں کو یاد کرائی جائیں کہ جس دل میں اللہ کے کلام کا نور ہوگا، وحشت سے دور ہوگا اور معمور ہوگا

*سوم*: مسنون دعائیں سکھانے کا بھی اہتمام کیا جائے، اوقات کی دعائیں، مکانات کی دعائیں اور معمولات کی دعائیں۔۔۔۔۔ یہ دعائیں، حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی طرف سے امت کیلئے تحفہ اور آفتوں اور فتنوں سے بچنے کا حصار ھیں۔۔۔۔۔!

یہ تین اہم دینی امور مکتب میں سیکھنے سکھانے کے ہیں، چونکہ معاشرے میں ہمارے مکتب کا نظام کمزور ہوگیا ہے، اس لیے ان تین کی طرف عشرہ اعتکاف میں خاص توجہ دی جائے، تاکہ جن افراد نے ان مبارک ساعتوں کےلیے اللہ کے گھر کو اپنایا ہے، وہاں سے فیضیاب ہوکر جائیں۔

تحریر:ابن الحسن عباسی
السلام علیکم ورحمۃ اللہ
تمام اہل مجموعہ کو مکتبہ جبریل انتظامیہ کی طرف سے دل کی گہرائیوں سے عید مبارک۔ اللہ تعالی یہ دن ہماری زندگی میں بار بار لائے، ہماری عبادتوں کو قبولیت سے نوازے، اور مسلمانان عالم کی مشکلات کو آسان کردے۔
ماہنامہ_النخیل_شوال_1440ھ_بک_مارک.pdf
3.9 MB
علمِ دین ویب سائٹ اور مکتبہ جبریل کا تعارف، مقاصد، اہداف، درپیش مسائل اور ای بک ریڈر کے تعارف پر مشتمل مضمون، ملاحظہ ہو ماہنامہ النخیل شوال 1440 ھ کے شمارے میں

اردو اسلامی ،تحقیقی و ادبی رسائل میں سب سے زیادہ پڑھا جانے والا ماہنامہ النخیل کا تیسرا شمارہ منظر عام پر آگیا ۔۔۔گراں قدر مضامین اور افادیت سے بھر پور تحریریں ۔۔۔ایک نظر ضرور دیکھیں ۔۔۔ہندو پاک کے ممتاز اہل علم کی نگارشات ۔۔۔۔ فقہ کی مشہورِ زمانہ کتاب *المحیط البرہانی* کا جامع تعارف۔۔۔۔۔نصاب تعلیم کے حوالے سے معروف ادیب غلام جیلانی برق کی ایک دلکش نایاب تحریر۔۔۔۔فقہ حنفی کا تاریخی ارتقاء: مولانا محمد انوار خان قاسمی بستوی کا شاندار مضمون ۔۔۔۔معروف ڈیجیٹل لائبریری مکتبہ جبریل کا تعارف، مقاصد، اہداف ، اس سے استفادہ کا طریقہ کار۔۔۔اور بہت کچھ۔۔۔۔
https://drive.google.com/file/d/1YBboH0bOJCR6JxikV0m87a-xrL-5qfPg/view?usp=drivesdk
ماہنامہ النخیل ذیقعدہ 1440 بک مارک.pdf
3.6 MB
اردو اسلامی ،تحقیقی و ادبی رسائل میں بکثرت پڑھا جانے والا ماہنامہ النخیل کا تازہ شمارہ منظر عام پر آگیا ۔۔۔گراں قدر مضامین اور افادیت سے بھر پور تحریریں ۔۔۔ایک نظر ضرور دیکھیں ۔۔۔ اہل علم اور شائقینِ مطالعہ کے لیے *النخیل کا مطالعہ نمبر* ۔۔۔۔ہندو پاک کے ممتاز اہل علم کی نگارشات ۔۔۔۔ مولانا ابن الحسن عباسی کے قلم سے شاندار مضمون *آپ تدریس کیسے کریں؟* ۔۔۔۔ فقہ کی مشہورِ زمانہ کتاب *الاشباہ والنظائر* کا جامع تعارف۔۔۔ *مذہبی القابات اور ہماری بے اعتدالیاں* ایک عمدہ تحریر۔۔۔۔ *معاشرتی مسائل میں وقف و تکافل کا کردار* ۔۔۔۔کینسر کے علاج کا ایک حیرت انگیز آزمودہ نسخہ، حمایت علی شاعر کی شاعری اور مولانا عطاء اللہ شاہ بخاری کی سخن پروری ،لطائف وظرائف۔۔۔اور بہت کچھ۔۔۔۔
ڈاؤن لوڈ لنک
https://drive.google.com/file/d/1-24IjRUSO7DfGnX4s0N3e65cuOoy8CIG/view?usp=drivesdk
*خوشخبری*

*النخیل کا مطالعہ نمبر*

النخیل کی اگلی اشاعت مطالعہ کے لیے خاص کر دی گئی ہے۔ مطالعہ علم کا اہم ذریعہ ہے لیکن دو دھاری تلوار بھی ہے، زندگی کے کس مرحلے میں کونسی کتابوں کا مطالعہ کرنا چاہیے ؟۔۔۔۔یہ انتخاب اصحاب علم ومطالعہ کی رہنمائی میں ہو تو اس کی افادیت بھی ہے اور وقت کی بچت بھی ورنہ کبھی کبھار فکر وعمل کے لحاظ سے یہ نقصان دہ بھی ہوسکتا ہے اور بسا اوقات غیر ضروری کتابوں کے مطالعہ سے وقت کا ضیاع بھی رہتا ہے ۔۔۔۔ مطالعہ کے رہنما اصول کیا ہیں؟ ۔۔۔اب تک اس موضوع پر کیا کچھ لکھا گیا ہے ؟۔۔۔ عہدِ حاضر کی بڑی علمی شخصیات کے مطالعہ کا دائرہ کار کیا ہے ؟...... اور مختلف علوم و فنون میں اہم قابلِ مطالعہ کتابیں کون سی ہیں؟۔۔۔۔۔ ان سوالات کا جواب مطالعہ نمبر کا حصہ ہے۔ ممتاز اہل علم اور ادیبوں کے قلم سے درج ذیل سوالنامہ کا جواب آپ اس میں پائیں گے:

*........سوال نامہ.........*

سوال اول:
آپ کے اندر ذوقِ مطالعہ کب نمایاں طور پر پیدا ہوا؟ آغاز کیسے ہوا؟ اس کی نشوونما کس طرح ہوئی؟ خاندانی نظامِ تربیت کا اثر کہاں تک ہوا؟

سوال دوم:
کون سی شخصیتیں تھیں جنہوں نے آپ کے ذوق مطالعہ کو مہمیز کیا اور اس سفر میں آپ کی رہنمائی کی؟ آپ کے مطالعہ کے مختلف ادوار کیا رہے؟ پسندیدہ موضوعات، ذوق میں ارتقائی تبدیلیاں؟

سوال سوم:
آپ کے پسندیدہ مصنفین؟ آپ کی پسندیدہ کتابیں؟ آپ کے پسندیدہ رسائل؟ پسندیدہ افسانہ نگار؟ کالم نگار؟ پسندیدہ مزاح نویس؟ طنز نگار؟

سوال چہارم:
آپ اپنی دنیائے مطالعہ میں کس ایک مصنف کو بلند ترین مقام پر رکھتے ہیں جس کا آپ کی ذہنی نشوونما پر سب سے زیادہ اثر پڑا ہو؟ (خصوصاً اردو لکھنے والوں میں سے؟)

سوال پنجم:
عام طور پر مطالعہ کے اوقات کیا ہوتے ہیں؟ رفتار مطالعہ کیا ہوتی ہے؟ کیا دورانِ سفر بھی مطالعہ کرتے ہیں؟

سوال ششم:
کیا  دورانِ مطالعہ آپ کتاب پر نشان لگاتے ہیں یا الگ نوٹ کر لیتے ہیں؟ کبھی خلاصہ لکھنے کا شوق رہا؟

سوال ہفتم:
نئے لکھاریوں اور قارئین کے لیے مطالعہ کے سلسلے میں کیا طریقہ کار ہونا چاہیے؟ کتابوں کے انتخاب میں رہنما اصول کیا ہوں؟ کسی کی رہنمائی میں مطالعہ کا مشورہ دیں گے یا اپنے ذوق کے اعتبار سے؟
۔۔۔۔۔۔۔۔

اس سوالنامہ کے جوابات تحریر کرنے والوں میں مدارس کے ممتاز علماء بھی ہیں، ادیب و اہل قلم بھی ہیں، صحافی و کالم نگار بھی ہیں اور کالج و یونیورسٹی کے لکچرار اور پروفیسر حضرات بھی۔ اس فہرست میں ہندو پاک کے علاوہ عالم عرب کے بعض مشہور اہل علم بھی شامل ہیں۔

امید ہے النخیل کا یہ نمبر شائقین علم کے ساتھ ساتھ نئی نسل کیلئے علمی رہنما اور مطالعاتی رہبر ثابت ہوگا۔

اللہ ہمارا حامی و ناصر ہو۔

ابن الحسن عباسی
ذیقعدہ 1440

* مطالعہ کے حوالے سے اہم مضامین مندرجہ ذیل ای میل ایڈریس پر بھیج کر تعاون فرمائیں(معاون ایڈمن ماہنامہ النخیل محمد بشارت نواز)
alnakhilkhasnumber@gmail.com
*عقیدتوں کا سفر*

ماہ ذی قعد کے آخر اور ذی الحجہ کی آمد آمد پر سوئے حرم جانے والے تیزگام قافلے گردش میں آنے لگتے ہیں ، ان ایام میں حجاز سے آنے والی سحر کی گل گشت ہواوں کی خوشبو کچھ زیادہ ہی دل کے آنگن کو مہکار دیتی ہے، شاید اس لئے کہ راہ عشق و جنون کے مسافروں کے بے تاب نالوں کی گونج بھی ان لہروں میں شامل ہوجاتی ہے۔۔۔۔۔۔جب " لبیک اللھم لبیک ۔۔۔۔۔۔" کی والہانہ صداوں سے حرم ، منی ، عرفات مزدلفہ اور وادی بطحا کے بام و در گونج اٹھتے ہیں ، *حرم* ۔۔۔۔۔۔۔رب ذوالجلال کی کبریائی کا مظہر، جہاں سکندری و قلندری کی مصنوعی روشیں فنا ہوکر شاہ و گدا، فقیر و امیر اور محمود و ایاز ایک ہی صف اور یکساں لباس میں کھڑے ، رب کے حضور گڑگڑاتے اور دنیوی آفتاب ذروں کا روپ دھارتے دکھائے دیتے ہیں۔۔۔جہاں *بیت اللہ* واقع ہے ، ہستی کے صنم خانوں میں وہ پہلا گھر خدا کا، جس کا ایک ایک بقعہ، تجلی گاہ جلال و جمال اور جس کا نظارہ دل پر دیوانگی وارفتگی کا ایک عالم بے خود طاری کردیتا ہے، جہاں نفس کے داغ ہرے اور شیطانی چرکوں کے زخم تازہ ہوجاتے ہیں، جذبہ بندگی چھلک پڑتا ہے، فریاد شکستگی، آہ وفغاں میں ڈھلتی ہے ، ہچکیاں بندھتی ہیں، اشکوں کا سیلاب امڈتا ہے اور خطاوں کا انبار، معصیتوں کا غبار بہتا چلا جاتا ہے، حقیقت یہ ہے کہ عقیدتوں کے اس سفر کی ہر منزل ایک تاریخ ہے، *منی*۔۔۔۔۔۔۔۔اہل وفا کی لافانی یادگار *عرفات* ۔۔۔۔۔۔۔۔اہل عشق کا دشت جنون، *مزدلفہ* ۔۔۔۔۔۔۔صحرائے راز و نیاز اور *وادی بطحا* کی فضائیں انفاس قدسیہ کی امین ۔۔۔۔۔۔۔۔۔!

حج کا سفر وحدت ملی کا بھولا ہوا سبق بھی یاد دلاتا ہے کہ چودہ سو سال پہلے اس بے آب و گیا وادی نے انسانیت کو جینے کا قرینہ سکھانے والی جو تہذیب عطا کی ، وہ کسی ایک خطہ یا ایک فرد کے ساتھ خاص نہیں بلکہ اس کے ماننے والے ایک ہی ذات کی کبریائی کے قائل ، ایک ہی کتاب اور ایک ہی نبی کی درس گاہ سے تعلیم پانے والی ایسی ملت ہے جو بتان رنگ و خون توڑنے کے بعد وجود میں آئی ، جس میں جڑنے کے بعد نہ تورانی باقی رہتا ہے، نہ ایرانی، نہ افغانی! یہ وحدت جب تک برقرار رہی ، ہماری تاریخ معجزے دکھاتی رہی ، اس کی سنگ راہ سے چشمے پھوٹتے، اس کے آگے کہسار دبتے، فاصلے سمٹتے، دریا جمتے ، طوفان رکتے، چٹان ریزہ ریزہ ہوتے اور وقت کی جابر آندھی ٹکرا کر از خود تحلیل ہوتی رہی ۔۔۔ سندھ میں قید ایک خاتون کے خط پر ہزاروں میل کے فاصلے سے محمد بن قاسم راجاوں کی خبر لینے پہنچا اور عمودیہ کے قید خانہ سے ایک عورت کے " وامعتصماہ " پکارنے پر خلیفہ معتصم بے چین ہوا اور اس وقت تک رہا ، جب تک عمودیہ فتح کر کے، گرفتار مسلمانوں کو آزادی نہیں دلائی

کشمیر نے نوے ہزار شہیدوں کی قربانی دی ، فلسطین کے چالیس لاکھ بے گھر ہوئے، افغانستان نے سولہ لاکھ شہداء کا نذرانہ پیش کیا اور احمد آباد نے دو ہزار خواتین اور معصوم بچوں کو جلتے الاوں میں زندہ جلائے جانے کا غم دیکھا ،۔۔۔۔۔ لیکن اجڑتے افغانستان، لٹتے کشمیر، پٹتے فلسطین اور جلتے احمد آباد کے زخم سہلانے کے لئے نہ کوئی محمد بن قاسم آیا ، نہ کوئی معتصم بے تاب ہوا

پس اے عقیدتوں کے مسافر! ۔۔۔۔۔۔۔۔جب آپ مدینہ منورہ پہنچیں، سید الانبیاء کے آستانہ کی رعنائی وزیبائی، واردات قلب کو ایک جہان تازہ عطا کردے ، گنبد خضرا کی سنہری جالیوں کی محبوبی و دلکشی، دامن دل کھینچ لے تو آنسوؤں کی برسات میں آقائے نامدار کے حضور، چشم ترکا سلام کہنے کے بعد امت کے آزردہ غلاموں کا یہ پیام دینا کہ ۔۔۔۔۔۔۔

حضور! دہر میں آسودگی نہیں ملتی
تلاش جس کی ہے ، وہ زندگی نہیں ملتی
ہزاروں لالہ و گل ہیں ، ریاض ہستی میں
وفا کی جس میں ہو بو ، وہ کلی نہیں ملتی
مگر میں نذر کو اک آبگینہ لایا ہوں
جو چیز اس میں ہے ،جنت میں بھی نہیں ملتی
جھلکتی ہے، تری امت کی آبرو اس میں
طرابلس کے شہیدوں کا ہے لہو اس میں

(آپ طرابلس کی جگہ عالم اسلام کی آج کی کسی شہادت گاہ کا نام لے سکتے ہیں )

ابن الحسن عباسی
ماہنامہ_النخیل_شمارہ_پانچ_مارک_شدہ.pdf
3.4 MB
اردو اسلامی ،تحقیقی و ادبی رسائل میں بکثرت پڑھا جانے والا ماہنامہ النخیل کا *پانچواں* شمارہ منظر عام پر آگیا ۔۔۔گراں قدر مضامین اور افادیت سے بھر پور تحریریں ۔۔۔ایک نظر ضرور دیکھیں ۔۔۔ہندو پاک کے ممتاز اہل علم کی نگارشات ۔۔۔۔ مولانا ابن الحسن عباسی صاحب کے قلم سے شاندار مضمون *دینی مدارس اور جدید علوم....چند احتیاط طلب پہلو* ۔۔۔۔ مفتی اعظم پاکستان مفتی ولی حسن قدس سرہ کی تحقیق *ہندوستان میں علم حدیث* ۔۔۔۔ *علامہ عبدالعزیز میمن* نامور ادیب، ڈاکٹر خورشید رضوی کے قلم سے دل نشین ادبی خاکہ۔۔۔۔مشہور اہلِ قلم، مدیر ماہنامہ آئینہ مظاہر علوم مفتی ناصرالدین مظاہری کی فکر انگیز تحریر *فتویٰ اور تقویٰ* ۔۔۔۔محمد بشارت نواز کا مضمون *1440 ہجری کے مسافرانِ آخرت* ۔۔۔نامور اہلِ علم کے ماہنامہ النخیل کے بارے میں تاثرات۔۔۔بلڈ پریشر اور اس کا علاج۔۔۔اور بہت کچھ۔۔۔۔
پی ڈی ایف ڈاؤنلوڈ لنک
https://drive.google.com/file/d/125dJO05O7jTwvx0oQJOHjHtRpAcgOPeO/view?usp=drivesdk
دار الافتاء ڈاٹ انفو
https://t.me/darulifta_info
کا ٹیلیگرام چینل

دار الافتاء کے تقریبا تمام فتاوی جات کے لنکس مع عنوان مسئلہ یہاں جمع کئے جارہے ہیں۔۔ اور ان شاء اللہ امید ہے کہ ایک ہفتہ میں یہ کام مکمل ہوجائے گا۔۔ آئندہ جتنے فتاوی ویب سائٹ میں شامل کئے جاتے رہیں گے۔ ارادہ ہے کہ انہیں یہاں بھی شامل کیا جاتا رہے۔۔ تاکہ بذریعہ چینل اہم مسائل میں تلاش ہوسکے۔۔
اب تک darulifta.info میں درج ذیل اداروں کے فتاوی شامل ہیں:

- دار الافتاء دار العلوم دیوبند
- دار الافتاء جامعہ بنوری ٹاؤن کراچی
- دار الافتاء جامعۃ الرشید کراچی
- دار الافتاء جامعہ بنوریہ کراچی
- دار الافتاء جامعہ اشرفیہ لاہور

دار الافتاء ڈاٹ انفو کا مختصر تعارف:

-مستند دار الافتاؤں کے فتاوی سے استفادہ کرنے کے لئے ایک منفرد ویب سائٹ
- مختلف دار الافتاؤں کی ویب سائٹس پر موجود فتاوی ایک جگہ جمع، جس کی وجہ سے تلاش میں سہولت
- 45,000 پینتالیس ہزار سے زائد فتاوی جات

https://t.me/darulifta_info